شہری پر تشدد کے مرتکب ملزمان کے خلاف تھانہ چونترہ میں مقدمہ درج

شبیر مغل سے ۔۔۔

راولپنڈی:شہری پر تشدد کے مرتکب ملزمان کے خلاف تھانہ چونترہ میں مقدمہ درج،سوشل میڈیا پر تشددد کی ویڈیو وائرل ہونے پر سی پی او نے نوٹس لے کر ایس پی صدر کو فوری کارروائی کا حکم دیا تھا،تفصیلات کے مطابق تھانہ چونترہ کے علاقہ میں ایک شہری کو تشدد کا نشانہ بنانے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تو سٹی پولیس آفیسر ڈی آئی جی محمد فیصل رانا نے اس کا سخت نوٹس لیتے ہوئے ایس پی صدر رائے مظہر اقبال کو طلب کر کے ان کو ملزمان کے خلاف فوری کارروائی کا حکم دیا،ایس پی صدر نے متاثرہ شخص احتشام علی کو شناخت کرنے کے بعد اپنے پاس بلایا جس نے بتایا کہ وہ سہال کا رہائشی ہے موٹر سائیکل پر اپنے گھر کی طرف سے آ رہا تھا کہ مجاہد پل پر گاڑی میں سوار ملزمان جمیل اکرم،علی صفدر،جہانزیب اور خالد قاضی وغیرہ نے6/7نامعلوم ملزمان کے ہمراہ آتشیں اسلحہ سے راستہ روکا تشدد کا نشانہ بنایا اسلحہ کے بٹوں کے وار کر کے زخمی کر دیا،ملزمان نقدی چرا کر فرار ہو گئے متاثرہ شخص نے بتایا کہ ملزمان کے ساتھ اس کی دیرینہ دشمنی چل رہی ہے،ایس پی صدر رائے مظہر اقبال نے تھانہ صدر رائے مظہر اقبال نے احتشام علی کی مدعیت میں تھانہ چونترہ میں مختلف دفعات کے تحت مقدمہ درج کروا دیا،انہوں نے سرعام تشدد کا نشانہ بنائے جانے پر ایس ایچ او چونترہ کو شو کاز نوٹس بھی جاری کیا،سی پی او فیصل رانا نے تشدد کی ویڈیو وائرل ہونے کے فوری بعد ہی متاثرہ شخص کی شناخت اور اس کی مدعیت میں مقدمہ درج کئے جانے پر ایس پی صدر کو شاباش دیتے ہوئے کہا کہ کسی کو بھی سرعام تشدد کا نشانہ بنانا قانون کو چیلنج کرنے کے مترداف ہے اور قانون چیلنج کرنے والوں کے ساتھ نمٹنا خوب جانتا ہے،سی پی او نے کہا کہ ملزمان کو اگلے48گھنٹوں میں گرفتار کر کے ان سے اسلحہ بر آمد کیا جائے،سی پی او نے کہا کہ پولیس ناجائز اسلحہ کے خلاف اپنی مہم کو تیز سے تیز تر کر دے کیوں کہ ناجائز اسلحہ ہی تمام تر قانون شکنیوں کا باعث بنتا ہے،سی پی او نے کہا کہ اگرچہ یہ وقوعہ مدعی کے بقول بھی ذاتی دشمنی کا شاخسانہ ہے پھر بھی اس طرح سرعام قانون شکنی قابل برداشت نہیں،جن علاقوں میں اس طرح کے قانون کو چیلنج کرنے والے قانون شکن موجود ہیں وہاں پر خصوصی آپریشن کئے جائیں،تاکہ کسی کو مستقبل میں ایسی قانون شکنی کی ہمت نہ ہو۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں