کتوں کے کاٹنے کے کیسز میں اضافہ انتہائی تشویشناک ہے ، کتوں کی افزائش نسل روکنے کے لئے سندھ حکومت اقدامات کرے

کراچی(غلام مصطفے عزیز ) گورنرسندھ عمران اسماعیل نے کہا ہے کہ صوبہ بھر میں کتوں کے کاٹنے کے کیسز میں اضافہ انتہائی تشویشناک ہے، ضرورت اس امر کی ہے کہ سندھ حکومت اس ضمن میں عملی اقدامات کرے، کتوں کی افزائش نسل روکنے کے لئے صوبہ سندھ سمیت پورے ملک میں اقدامات کرنا ہوں گے، پچھلے ادوار میں کتا مار نے کی مہم چلی جاتی تھی مگر اب کتا مارنے کا معاملہ دو دھاری تلوار بن گیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو این آئی سی ایچ میں داخل زخمی حسنین کی عیادت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ گورنرسندھ نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان سندھ کے عوام کے لئے بے حد فکر مند ہیں ان کی ہی ہدایت پر میں آج حسنین کو دیکھنے آیا ہوں۔ گورنرسندھ نے کہا کہ وزیر اعظم پاکستان نے رکن قومی اسمبلی آفتاب صدیقی کی ذمہ داری لگائی ہے کہ وہ کتوں کے کاٹنے سے زخمی ہونے والے حسنین جس کا تعلق لاڑکانہ سے ہے، کی علاج معالجہ میں ہر ممکن مدد کری ۔ انہوں نے کہا کہ متاثرہ فیملی کے لئے بھی مالی امداد فراہم کی جائے گی۔ ایک سوال پر گورنرسندھ نے کہا کہ این آئی سی ایچ حکومت سندھ کے زیر انتظام ادارہ ہے وہ ہی عملہ کی کمی اور دیگر مسائل کو حل کر سکتے ہیں۔ گورنرسندھ نے کہا کہ ڈاکٹرز پوری کوشش کررہے ہیں، حسنین جلد از جلد صحتیاب ہو جائے مگر کتے کے کاٹنے سے بچے کا چہرہ اور سر بری طرح متاثر ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت علاج معالجہ کے لئے والدین کو ہر ممکن تعاون فراہم کرے گی۔ گورنرسندھ نے کہا کہ کتوں کی تعداد میں اضافہ کو کنٹرول کرنا وقت کی ضرورت ہے، اس ضمن میں وفاق ہر ممکن تعاون فراہم کرنے کو تیار ہے۔ قبل ازیں گورنرسندھ کو ڈائریکٹر این آئی سی ایچ ڈاکٹر جمال رضا نے بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ حسنین کی حالت قدر بہتر ہے، حسنین کو بہترین علاج معالجہ کی سہولیات فراہم کی جارہی ہے جبکہ تجربہ کار اور ماہر ڈاکٹر ز کا پینل بھی تشکیل دے دیا گیا ہے جس کے رائے کے مطابق علاج کیا جا رہا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں